برطانیہ نے پاکستان کا نام ایک اور ’گرے لسٹ ‘میں ڈال دیا

لندن (نیوز ڈیسک ) برطانیہ نے پاکستان کو ایک اور گرے لسٹ میں شامل کر دیا۔ تفصیلات کے مطابق برطانوی حکومت نے پاکستان سمیت 21 ممالک کو گرے لسٹ میں شامل کر دیا، برطانوی حکومت کے مطابق یہ اکیس ممالک وہ ہیں جہاں منی لانڈرنگ کی جاتی ہے۔ گرے لسٹ میں شامل ان 21 ممالک کو ہائی رسک قرار دیا گیا

ہے۔برطانیہ کی 21 ناپسندیدہ ممالک کی فہرست فنانشل ایکشن ٹاسک فورس (ایف اے ٹی ایف) کی ہائی رسک یا زیادہ مانیٹر کیے جانے والے ممالک کی فہرست کے تحت ہے۔ تنازعات سے دوچار ان ممالک کی فہرست میں پاکستان کا پندرہواں نمبر ہے جبکہ اس فہرست میں پاکستان کے ساتھ ساتھ شام ، یوگانڈا، یمن اور زمبابوے شامل

ہیں۔ اس فہرست میں شامل دیگر ممالک میں البانیا، باربیڈوز، بوٹسوانا، برکینا فاسو، کمبوڈیا، کےمین آئیلینڈز، ڈی ڈیموکریٹک پیپلز ری پبلک آف کوریا، گھانا، ایران، جمائکا، موریشس، مراکش، میانمار، نکاراگوا، پاکستان ، پانامہ، سینیگل ، شام، یوگانڈا ، یمن اور زمبابوے ہیں۔برطانوی حکومت کی جانب سے جاری کی گئی دستاویز میں اس

فہرست میں شامل ممالک کو، کمزور ٹیکس کنٹرول اور دہشت گردی کی مالی اعانت اور منی لانڈرنگ پر چیک اینڈ بیلنس نہ ہونے کی وجہ سے خطرے سے دوچار ممالک قرار دیا گیا ہے۔ برطانوی حکومت کے مطابق ٹیکس کنٹرول کا نہ ہونا، کی مالی معاونت اور منی لانڈرنگ کے مسائل سے دوچار ملک خطرہ ہیں۔اس فہرست کا عنوان”منی

لانڈرنگ اینڈ ٹیررسٹ فنانسنگ ریگولیشن 2021ء’ ” ہے، جسے بریگزٹ ڈیولپمنٹ کے بعد 26 مارچ 2021ء کو جاری کیا گیا تھا۔ یاد رہے کہ قبل ازیں برطانیہ نے پاکستان کو ریڈ لسٹ میں شامل کرکے سفری پابندی عائد کی تھی ۔ریڈ لسٹ میں شامل ممالک کے شہریوں پر برطانیہ آنے پر پابندی عائد ہے جس کے تحت ریڈ لسٹ میں شامل ہونے کے بعد پاکستانیوں پر بھی 9 اپریل سے برطانیہ آمد پر پابندی عائد کی گئی۔