crossorigin="anonymous">

مرد اور عورت کو ایک ساتھ رہنے کے لیے نکاح کی ضرورت نہیں ۔۔ نکاح کرنے والی ملالہ یوسف زئی شادی سے متعلق کیا کہتی تھیں؟ جانیے

سوشل میڈیا پر اکثر ہم وہ خبریں پڑھتے رہتے ہیں جو کہ عام زندگی میں ہم سوچ بھی نہیں سکتے ہیں۔ کئی خبریں ایسی ہوتی ہیں جو پاکستانی معاشرے کے خلاف بھی ہوتی ہیں لیکن اسے اظہار رائے کی آزادی کا نام دے کر بولا

جاتا ہے۔ ہماری ویب ڈاٹ کام آج ملالہ یوسف زئی کے نکاح اور ان کے ایک ایسے بیان کے بارے میں بتائے گئی جس کی وجہ سے انہیں پاکستان میں عوامی ردعمل کا سامنا کرنا پڑا تھا۔ دراصل کچھ ماہ پہلے ملالہ یوسف زئی

کا بیان سوشل میڈیا پر چرچہ میں تھا جس میں وہ کہہ رہی تھیں کہ مرد اور عورت کو نکاح کی ضرورت نہیں۔ ان کے اس بیان کے بعد سوشل میڈیا پر صارفین کی جانب سے شدید ردعمل سامنے آیا تھا۔ ملالہ کا کہنا تھا کہ مجھے

اب تک سمجھ میں آیا کہ لوگ شادی کیوں کرتے ہیں۔ اگر آپ چاہتے ہیں کہ آپ کی زندگی میں کوئی شخص ہو، تو اس کے لیے آپ شادی کے کاغذات پر دستخط کیوں کریں؟ ہم کیوں نا پارٹنر شپ میں رہیں۔ ملالہ نے پہلے تو سوال کیا کہ شادی کی کیا ضرورت ہے جب آپ ایک شخص کے ساتھ رہنا چاہتے ہو تو۔ یعنی ملالہ کہنا چاہ رہی

ہیں کہ مغرب ہی کی طرح کوئی بھی گھر میں آجائے، غیر مردوں اور غیر عورتوں سے روابط ہوں، ناجائز اولاد ہو۔ کیون کہ عام طور پر پارٹنر شپ کا یہی مطلب ہوتا ہے۔ لیکن ایسے متنازع بیانات دینے والی ملالہ کو جب آج شادی کرتے پایا گیا تو ان کا یہی بیان یاد آگیا۔ اس بات سے یہ ہی کہا جا سکتا ہے کہ یا تو ملالہ نے وہ بیان غلط دیا

تھا یا پھر اب یوٹرن لے لیا۔ لیکن ان کے بیان سے کئی لوگ ایسے بھی ہوں گے جو ان کی اس بات کو صحیح سمجھ رہے ہوں گے۔ پاکستانی معاشرے میں نکاح جو ایک خاص اہمیت حاصل، لیکن ان کے بیان سے ہو سکتا ہے لوگوں کے بیانیہ ڈگمگانے لگے ہوں۔ کیونکہ وہ ایک ایسے عہدے پر موجود ہیں جہاں ان کو لاکھوں افراد سنتے ہیں۔

Check Also

مرغیوں کو دل کا دورہ پڑا‘، مالک نے باراتیوں پر مقدمہ کردیا۔ انوکھا کیس، آخر کیوں جانیے

بھارتی ریاست اڑیسہ میں باراتیوں کی جانب سے تیز میوزک اور ڈھول باجے کے باعث …

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *