بین الصوبائی ٹرانسپورٹ پر17 مئی تک پابندی عائد کردی گئی

بین الصوبائی ٹرانسپورٹ پر17 مئی تک پابندی عائد کردی گئی - Ptv Sports

اسلام آباد (آن لائن ) نیشنل کمانڈ آپریشن سینیٹر (این سی اوسی)نے ملک میں کورونا وباء کے بڑھتے ہوئے کیسز کی روک تھام اور ہلاکتوں میں اضافے کے پیش نظر صوبوں کی تجویز بین الصوبائی ٹرانسپورٹ پر17 مئی تک پابندی عائد کردی، بین الصوبائی ٹرانسپورٹ ہفتے میں 2 دن ہفتہ اوراتوار مکمل بند ہوگی، وفاقی وزیر منصوبہ بندیاور

سربراہ این سی اوسی اسد عمر نے زیادہ شرح والے شہروں میں لاک ڈاؤن نافذ کرنے عندیہ دیدیا ہے ۔تفصیلات کے مطابق وفاقی وزیر منصوبہ بندی اسد عمر کی زیرصدارت ہفتہ کو این سی اوسی کا اجلاس ہوا۔اجلاس میں کورونا وائرس کی موجودہ صورتحال اور این اوپیز پر عملدرآمد کے حوالے سے تجاویز کا جائزہ لیا گیا۔ این سی اوسی کے

اعلامیہ میں بتایا گیا کہ سائینو فورم کی 5 لاکھ ڈوزز پاکستان پہنچ رہی ہیں۔ پی اے ایف کے خصوصی طیارے سے سائینو فورم کی ڈوزز آئیں گی۔ کورونا کے پھیلاؤ والے شہروں میں لاک ڈاؤن کی تجاویز پرغور کیا گیا۔کورونا کیسز کے زیادہ شرح والے شہروں میں حالات بدستور برقرار رہے اور ایس اوپیز پر عملدرآمد نہ کیا گیا تو لاک ڈاوَن لگایا

جاسکتا ہے۔لاک ڈاون کا فیصلہ تمام فریقین سے مشاورت کے بعد کیا جائے گا۔ مارکیٹوں، شاپنگ مالز، پبلک ٹرانسپورٹ اور تعلیمی ادارے مکمل بند کرنے کی تجاویز ہیں۔ حالات بدستور خراب رہے تو لاک ڈاؤن لگایا جاسکتا ہے، مارکیٹیں، شاپنگ مالز اور تعلیمی ادارے مکمل بند کردیے جائیں گے، لاک ڈاون کا فیصلہ تمام فریقین کی

مشاورت سے کیا جائیگا۔ ایس اوپیز پر عملدرآمد کروانے کیلئے صوبائی حکومتوں کی درخواست پر فوج، ایف سی اور رینجرز کے ذریعے مدد فراہم ہوگی۔ ایس اوپیز پر عملدرآمد کروانے کیلئے صوبائی حکومتوں کیدرخواست پر فوج، ایف سی اور رینجرز کے ذریعے مدد فراہم ہوگی۔ اعلامیہ میں مزید کہا گیا کہ بین الصوبائی ٹرانسپورٹ پر17 مئی تک

پابندی عائد کردی گئی ہے۔بین الصوبائی ٹرانسپورٹ17مئی تک ہفتے میں 2 دن ہفتہ اوراتوار کو بند ہوگی۔ 60 سال سے زیادہ عمر کے شہریوں کو واک ان ویکسی نیشن کی سہولت دینے کا فیصلہ کیاہے۔ اجلاس میں آکسیجن کی سپلائی کے حوالے سے تفصیلی بریفنگ دی گئی۔ کیسز میں اضافے کے پیش نظر6 ہزار901 بستروں کا اضافہ کیا گیا

ہے۔آکسیجن سپلائی کی بھی سخت مانیٹرنگ کی جارہی ہے۔ ہسپتالوں کو 2 ہزار811 آکسیجن بیڈز، 431 وینٹی لیٹرز اور ایک ہزار196آکسیجن سلنڈر بھی فراہم کیے گئے ہیں۔