فوج کی وضاحتیں! مولانا فضل الرحمان پھر میدان میں آگئے، نیا پنڈورا باکس کھول دیا

فوج کی وضاحتیں! مولانا فضل الرحمان پھر میدان میں آگئے، نیا پنڈورا باکس کھول دیا

اسلام آباد : جمعیت علمائے اسلام ف کے سربراہ مولانا فضل الرحمان کا کہنا ہے کہ فوج کو سیاست میں نہ گھسیٹنے کی وضاحتیں دینے کی ضرورت کیوں پڑ گئی۔انہوں نے اسلامیہ ٹھٹھہ میں میڈیا سے بات کرتے ہوئے کہا کہ سیاست میں نہ گھسیٹنے کی بات کرنے والوں کے بارے میں یہ تاثر کیوں ہے کہ وہ سیاست میں مداخلت کرتے ہیں۔

الیکشن میں دھاندلیاں کراتے ہیں اور دھاندلیوں کی بنیاد پر ایک ناجائز حکومت قوم پر مسلط کرتے ہیں۔اس کا جائزہ ان کو خود لینا چاہئیے اور فیصلہ کرنا چاہئیے کہ وہ اس سلسلے کو ختم کریںگے، ان وضاحتوں کی انہیں کیوں ضرورت پڑ گئی ہے۔مولانا فضل الرحمن نے مزید کہا کہ ہماری کسی سے کوئی دشمنی نہیں ہے۔ہم اداروں کا

احترام کرتے ہیں اور اداروں سے ہماری کوئی لڑائی نہیں ہے۔ ہم مطالبہ کرتے ہیں کہ ہر ادارہ اپنی آئینی دائرہ کار میں رہتے ہیں ہوئے اپنی ذمہ داریوں سے وابستہ رہے۔مولانا فضل الرحمن نے کہا جس حکومت کو عوام کی پشت پناہی حاصل نہ ہو وہ کبھی بھی حکومت نہیں کر سکتی کیونکہ ان کے پاس صلاحیت نہیں ہوتی۔نااہل حکومت نے

ملک کی معیشت کو تباہ و برباد کر دیا ہے کیونکہ انہیں عوام کی پشت پناہی حاصل نہیں ہے۔ اس حکومت نے قوم کو کچھ نہیں دیا۔واضح رہے کہ گذشتہ روز نجی ٹی وی کے مطابق ایک بیان میں ڈی جی آئی ایس پی آر میجر جنرل بابر افتخار نے کہا کہ سب کو معلوم ہے کورونا سے پوری دنیا متاثر ہوئی، پاکستانی قوم نے کورونا کا

کامیابی سے مقابلہ کیا اور ہیلتھ کیئر ورکرز نے کورونا سے مقابلے میں قوم کی بھرپورمدد کی۔ انہوں نے کہاکہ فوج کو سیاست میں مت گھسیٹیں، ہمارے کسی قسم کے کوئی بیک ڈور رابطے نہیں ہورہے اور کسی قسم کی سیاست کے ساتھ ہمارا تعلق نہیں ہے۔انہوں نے کہا کہ اس بارے میں بغیر تحقیق بات کرنا کسی کو بھی سوٹ نہیں کرتا، اگر اس متعلق کوئی ثبوت ہیں تو سامنے یلائیں ورنہ اس قسم کی قیاس آرائیاں بند ہونی چا ہیے۔