انا للہ وانا الیہ راجعون! پہاڑو ں کا بیٹا پہاڑوں میں ہی کھو گیا، ساجد سدپارہ نے اپنے والد کے موت کی تصدیق کر دی

انا للہ وانا الیہ راجعون! پہاڑو ں کا بیٹا پہاڑوں میں ہی کھو گیا، ساجد سدپارہ نے اپنے والد کے موت کی تصدیق کر دی

لاہور (نیوز ڈیسک )کوہ پیما علی سدپارہ کے بیٹے ساجد سد پار ہ نے والد کی موت کی تصدیق کر دی ہے ، ان کا کہنا تھا کہ کے ٹو نے علی سدپارہ کو اپنے آغوش میں لے لیا  ہے، اللہ میرے والد کو جنت میں اعلیٰ مقام دے اور  میرے خاندان کو یہ صدمہ برداشت کرنے کی توفیق عطافرمائے ۔ ساجد سدپارہ نے آئس لینڈ اور چلی کے دونوں غیر

ملکی کو ہ پیماﺅں کے اہل خانہ ، صوبائی وزیر سیاحت راجہ ناصر علی خان کے ہمراہ پریس کانفرنس کرتے ہوئے اپنے والد کی موت کی تصدیق کر دی ہے ، ان کا کہناتھا کہ اپنے والد کا مشن جاری رکھوں گا اور ان کا خواب پورا کروں گا، علی سدپارہ اور 2غیرملکی کےٹوکی مہم جوئی میں لاپتا ہوئے تھے یقین ہے کہ انہیں کے ٹو سر کرنے کے

بعد واپسی پر حادثہ پیش آیا ، ہمارے کوہ پیما دوست مسلسل صدمے اور تکلیف کے مرحلے سے گزر رہے ہیں ،پاکستانی قوم کی محبت میرے خاندان کیلئے انتہائی حوصلے اور ہمت کا باعث بنی، میرا خاندان انتہائی شفیق باپ سے محروم ہواہے اوردنیا ایک بہادر اور با صلاحیت مہم جو سے محروم ہوئی ہے ، ۔ساجد سدپارہ کا کہناتھا کہ علی

سدپارہ نے محنت ، بہادری اور ہنر مندی سے 8 ہزار سے بلند 8 چوٹیاں سر کیں ، نانگا پربت کو پہلی بار سردیوں میں سر کر کے وارلڈ ریکارڈ بنایا ۔ ان کا کہناتھا کہ علی سدپارہ کو تلاش کرنے کیلئے کیے جانے والا آپریشن ناممکن تھا لیکن پاک فوج نے تمام وسائل بروئے کار لاتے ہوئے انہیں تلاش کرنے کی بھر پور کوشش کرتے ہوئے ممکن بنایا ، علی سدپارہ کی تلاش میں جدید ٹیکنالوجی کا بھی استعمال کیا گیا ۔ساجد سد پارہ کا پہلے ہی دن کہناتھا کہ ان کا

زندہ رہنا بہت مشکل دکھائی دیتاہے ، جن جن اداروں نے ریسکیو آپریشن میں حصہ لیا میں ان کا شکریہ ادا کرتاہوں ۔ یاد رہے کہ پاکستانی کوہ پیما محمد علی سد پارہ موسم سرما میں کے ٹو سر کرنے کی مہم جوئی میں مصروف تھے اور اس مہم جوئی میں ان کے ساتھ ان کے بیٹے ساجد سدپارہ سمیت غیر ملکی کوہ پیما بھی تھے۔5 فروری کو ساجد سدپارہ آکسیجن سلینڈر میں مسئلے کے باعث واپس بیس کیمپ آگئے تھے لیکن ان کے والد محمد علی سدپارہ بیس کیمپ سے واپس نہیں لوٹے تھے۔محمد علی سدپارہ اور غیر ملکی کوہ پیما کی تلاش کے لیے پاک فوج اور دیگر اداروں کا ریسکیو آپریشن بھی جاری ہے لیکن اب تک کوہ پیماؤں کا کچھ پتا نہیں چل سکاتاہم اب ان کے صاحبزادہ ساجد سدپارہ نے والد کی موت کی تصدیق کر دی ہے۔