اچھا تو یہ بات تھی ۔۔۔!!!سینیٹ الیکشن بلامقابلہ کس شخص کی وجہ سے ممکن ہوا؟ چودھری پرویزالٰہی نے بتا دیا

لاہور (ویب ڈیسک) پنجاب میں سینیٹ کے بلا مقابلہ انتخابات کی اندرونی کہانی سامنے آگئی، بلامقابلہ انتخاب کیلئے اسپیکر پنجاب اسمبلی چودھری پرویزالٰہی نے مرکزی کردارادا کیا، پرویزالٰہی نے پیپلزپارٹی اور ن لیگ سے اپنے زائد امیدواروں کے کاغذات واپس لینے کیلئے آصف زرداری ودیگر سے رابطے بھی کیے۔ ذرائع کے مطابق پنجاب میں

سینیٹ کے بلامقابلہ انتخابات کی اندرونی کہانی میں معلوم ہوا ہے کہ اسپیکر پنجاب اسمبلی پرویزالٰہی نے بلامقابلہ انتخاب کیلئے مرکزی کردارادا کیا۔ پرویزالٰہی نے سابق صدرآصف علی زرداری سے فون پر رابطہ بھی کیا اور ان سے درخواست کی کہ اپنا امیدوار واپس لے لیا جائے۔ اسی طرح مسلم لیگ ن سے رابطے کے بعد ن لیگی قیادت نے

بھی زائد امیدواروں کے کاغذات واپس لے لیے۔ جس کے بعد پنجاب میں بلامقابلہ انتخابات کا عمل ممکن ہوسکا۔ اسپیکر پنجاب اسمبلی کی کاوشوں سے پنجاب میں عددی تعداد کے مطابق امیدوار کامیاب ہوئے۔ واضح رہے  پنجاب میں سینیٹ انتخابات میں تمام 11 امیدوار بلامقابلہ منتخب ہوگئے ہیں، کامیاب امیدواروں میں 6 تحریک انصاف

اور 5 مسلم لیگ ن کے کامیاب امیدوار شامل ہیں۔ الیکشن کمیشن پنجاب نے کہا کہ پنجاب کی تمام خالی نشستوں پر حصہ لینے والے امیدوار بلامقابلہ کامیاب ہوگئے ہیں۔ان میں تحریک انصاف، مسلم لیگ ن اور مسلم لیگ ق کے ٹیکنوکریٹس اورجنرل نشستوں پر تمام جماعتوں کے امیدوار کامیاب قرار پائے ہیں۔ ان میں سید علی ظفر، ڈاکٹر زرقا،

سعدیہ عباسی، عرفان الحق صدیقی، ساجد میر، اعظم نذیر تارڑ، اعجاز چوہدری، عون عباس اور کامل علی آغا بھی کامیاب ہونے والوں میں شامل ہیں۔ اسی طرح پی ٹی آئی کے امیدوار سیف اللہ سرور نیازی  اور مسلم لیگ ن کے مشاہداللہ خان مرحوم کے بیٹے افنان اللہ خان بھی بلامقابلہ منتخب ہوگئے ہیں۔ الیکشن کمیشن ان امیدواروں کی کامیابی کا نوٹیفکیشن کل جاری کردیا جائے گا۔