’حمزہ شہباز کی رہائی، لاہور ہائیکورٹ نے تحریری فیصلہ جاری کر دیا

لاہور (نیوز ڈیسک ) اپوزشین لیڈر پنجاب اسمبلی حمزہ شہباز کی رہائی کے تحریری فیصلے میں عدالت نے کہا ہے کہ ملزمان کو پراسیکیوشن کے رحم و کرم پر نہیں چھوڑا جا سکتا اور غیر معینہ وقت تک جیل میں گلنے سڑنے نہیں دے سکتے۔ تفصیلات کے مطابق لاہور ہائی کورٹ کے 2 رکنی بنچ نے مسلم لیگ ن کے رہنماء پنجاب اسمبلی میں قائد

حزب اختلاف حمزہ شہبازشریف کی رہائی کا تحریری فیصلہ جاری کردیا ، جسٹس سرفراز ڈوگر کی سربراہی میں 2 رکنی بینچ نے تحریری فیصلہ جاری کیا ، جس میں عدالت نے قرار دیا ہے کہ ٹرائل کورٹ کی آرڈر شیٹ سے لگتا ہے درخواست گزار ہر پیشی پر موجود ہوتے ہیں ، حمزہ شہباز کیس کے مرکزی ملزم نہیں ہیں اور ان کا کیس شہباز

شریف کے برابر نہیں ہے جو پہلے ہی سلاخوں کے پیچھے ہیں۔لاہور ہائی کورٹ کے فیصلے میں کہا گیا کہ ملزمان سماعت کے دوران ٹرائل کورٹ کے سامنے باقاعدگی سے پیش ہو رہے ہیں ، اگر کبھی وکیل نہ آئے تو اس کا قصور وار درخواست گزار نہیں ہوتا ، کیوں کہ وکلاء کی احتساب عدالت میں عدم حاضری ہائی کورٹ یا اعلی عدلیہ میں پیشی کی وجہ سے ہوئی۔