صوبائی حکومت کا بڑا فیصلہ ، تمام سرکاری ونجی تعلیمی اداروں کو آٹھویں جماعت تک کب تک بند رکھے جائیں گے ، اعلان کر دیا گیا

کراچی (این این آئی) سندھ بھر میں تمام نجی اور سرکاری اسکولوں میں آٹھویں جماعت تک کے تدریسی عمل کو منگل 6اپریل سے 21اپریل تک کرونا کی صورتحال کے پیش نظر معطل کردیا گیا ہے۔ تاہم اس دوران آن لائن کلاسز اور ہوم ورک کے لئے واٹس اپ، ای میل یا ہفتہ میں ایک بار والدین کو اسکول آکر ہوم ورک لینے کی اجازت ہوگی۔

محکمہ اسکول ایجوکیشن اینڈ لٹریسی ڈیپارٹمنٹ نےاس حوالے سے باقاعدہ نوٹیفکیشن جاری کردیا ہے۔ تفصیلات کے مطابق سندھ بھر میں کرونا کی صورتحال کے پیش نظر سندھ کرونا ٹاسک فورس کی ہدایات پر سندھ بھر میں تمام نجی اور سرکاری تعلیمی اداروں میں کلاس آٹھویں تک کے فزیکل تدریس کا 15 روز کے لئے معطل کردیا گیا

ہے۔ وزیر تعلیم سندھ سعید غنی نے کہا ہے کہ اس سلسلے میں سندھ ٹاسک فورس برائے کرونا وائرس کی ہدایات پر گذشتہ روز محکمہ تعلیم کی اسٹئیرنگ کمیٹی کا اجلاس منعقد کیا گیا تھا، جس میں تمام اسٹیک ہولڈرز کو صورتحال سے آگاہ کیا گیا اور اس سلسلے میں ان سے مشاورت کی گئی تھی کہ اگر حکومت سمجھتی ہے اور

محکمہ صحت اور دیگر کی جانب سے کرونا پھیلاؤ کو روکنے کے لئے ہمیں مڈل تک کے تعلیمی اداروں میں آنے والے چھوٹے بچوں میں وائرس کے پھیلاؤ کو روکنے کے لئے تدریسی عمل کو 15 روز کے لئے موخر کرنا پڑا تو کرسکتے ہیں۔ سعید غنی نے کہا کہ ہفتہ کی شام کو وزیر اعلی سندھ کی زیر صدارت منعقدہ سندھ ٹاسک فورس برائے کرونا

وائرس کے اجلاس میں تمام تر صورتحال کا جائزہ لیا گیا اور یہ فیصلہ کیا گیا ہے کہ منگل 6 اپریل سے 21 اپریل تک تمام نجی اور سرکاری تعلیمی اداروں میں کلاس آٹھویں تک کی تدریسی عمل کو معطل کیا جائے اور اس

دوران آن لائن کلاسز، ہوم ورک کے لیے واٹس اپ، ای میل سمیت دیگر ذرائع اور اگر نہ ہوں تو والدین ہفتہ میں ایک بار اسکول جاکر اپنے بچوں کا ہوم ورک لے سکیں گے۔ انہوں نے کہا کہ یہ تمام اقدامات چھوٹے بچوں میں آنے والی کرونا وائرس کی تیسری لہر سے ان کو بچانے کے لئے کئے گئے ہیں۔‎