: اعلیٰ حکام سوار ، مگر پاکستان طیارے کو افغان سرزمین پر لینڈ کرنے کی اجازت نہ ملی….

: اعلیٰ حکام سوار ، مگر پاکستان طیارے کو افغان سرزمین پر لینڈ کرنے کی اجازت نہ ملی….

راولپنڈی (ویب ڈیسک)اسپیکر قومی اسمبلی اسد قیصر کی زیر صدارت افغانستان کے دورے پر جانے والے پارلیمانی وفد کے طیارے کو کابل میں لینڈنگ کی اجازت نہ ملی،ایئر پورٹ حکام کا کہنا ہے کہ چند خدشات پر لینڈنگ سے روکا جبکہ رکن قومی اسمبلی گل داد خان نےکہاہےکہ پائلٹ سے افغان حکام رابطے میں تھے، انہیں بتایا گیا نیٹو

افواج لینڈنگ کی اجازت نہیں دے رہے،وہ سمجھتے ہیں کابل کا نظم و نسق امریکی افواج کے پاس ہے، دوسری جانب ن لیگ نے سرکاری وفود کے بیرونی دوروں کا بائیکاٹ ختم کردیا۔تفصیلات کے مطابق اسپیکر قومی اسمبلی اسد قیصر نے پارلیمانی وفد کے ہمراہ افغانستان کا دورہ کرنا تھا تاہم پاکستانی وفد کے جہاز کو کابل ایئرپورٹ پر

لینڈنگ کی اجازت نہ ملی ،اسد قیصر پارلیمانی وفد کے ہمراہ تین روزہ دورے کے لیے افغانستان روانہ ہوئے تھے، وفد میں نمائندہ خصوصی برائے افغانستان صادق خان اور رکن پارلیمان غلام مصطفیٰ شاہ بھی شامل تھے، اس کے علاوہ وفد میں ساجد خان، رانا تنویر، گل داد خان، شیخ یعقوب اور شاندانہ گلزار بھی شامل تھے ، پاکستان کے

پارلیمانی وفد نے افغان صدر اشرف غنی، وزیر خارجہ اور افغان پارلیمنٹ کےا سپیکر سے ملاقاتیں کرنا تھیں،پارلیمانی وفد کے دورے کا مقصد پاکستان اور افغانستان کے درمیان اعتماد بحال کرنا اور افغانستان کے راستے وسط ایشیائی ممالک کے لیے برآمدات میں رکاوٹوں کے معاملے پر بات چیت کرنا تھا۔