lجہانگیر ترین اکیلے نہیں، کئی اور لوگ بھی شامل ہیں  انصار عباسی کے تہلکہ خیز انکشافات –

lجہانگیر ترین اکیلے نہیں، کئی اور لوگ بھی شامل ہیں  انصار عباسی کے تہلکہ خیز انکشافات - Sabee Kazmi

اسلام آباد (مانیٹرنگ ڈیسک) جہانگیر ترین اکیلے نہیں ہیں، کئی اور لوگ بھی ہیں۔ کم از کم 14؍ شوگر ملز کو ایف آئی اے لاہور کی جانب سے ’’حتمی نوٹس‘‘ بھیجا گیا ہے اور ساتھ ہی ’’شوگر مافیا‘‘ کے مختلف کرداروں کیخلاف کئی مقدمات بھی درج کیے گئے ہیں۔اگرچہ یہ کہا جاتا ہے کہ چینی کے کاروبار میں جہانگیر ترین بڑے

کھلاڑی ہیں لیکن اس کے باوجود شہباز شریف کی فیملی ایف آئی اےکی ’’اہداف کی فہرست‘‘ میں سرفہرست ہے، حالانکہ اس سے پہلے درجہ بندی میں جہانگیر ترین کا نام سب سے پہلے تھا۔ روزنامہ جنگ میں انصار عباسی کی خبر کے مطابق ایف آئی اے نے اپنی ایف آئی آر میں الزام عائد کیا ہے کہ شہباز شریف اور ان کے بیٹوں نے

2008ء سے 2018ء تک چھپا کر’’بیرونی ذرائع‘‘ سے جعلی اکائونٹس کھول کر 25؍ ارب روپے کی منی لانڈرنگ کی ہے۔ یہ اکائونٹس کم اجرت پر رکھے گئے آر ایس ایم ایل کے ملازمین (چپڑاسی اور کلرک) کے نام پر کھولے گئے۔جہانگیر ترین کی جے ڈی ڈبلیو ملز، جو پبلک لمٹیڈ لسٹڈ کمپنی ہے، کے معاملے میں جہانگیر ترین پر الزام ہے کہ انہوں نے

بےایمانی سے جے کے فارمز لمیٹڈ (سی ای او علی ترین) کے اثاثے 4.35؍ ارب روپے میں خریدے اور اس طرح انہوں نے پبلک شیئر ہولڈرز کو دھوکا دیا اور 20؍ نومبر 2013ء کے معاہدہ فروختگی کے ذریعے اپنے بیٹے کو فائدہ پہنچایا۔خسرو بختیار کے خاندان کی آر وائی کے شوگر مل کو بھی حتمی نوٹسبھیجا گیا ہے جو سٹہ مافیا کی تحقیقات سے

متعلق ہے۔ ترین کی طرح، آر وائی کے شوگر مل پر الزام ہے اس نے بے ایمانی سے سٹہ مافیا کے واٹس ایپ گروپ کے خفیہ نیٹ ورک کے ساتھ مل کر چینی کی قیمتیں بڑھائیں۔ایسے ہی نوٹسز دیگر شوگر ملوں کو بھی بھیجے گئے ہیں جن میں ٹو اسٹار شوگر ملز، کشمیرشوگر ملز، حسین شوگر ملزم، چنار شوگر ملز، حمزہ شوگر ملز، جے ڈی

ڈبلیو شوگر ملز، تاندلیاں والا شوگر ملز، العربیہ شوگر ملز، اتحاد شوگر ملز، المز شوگر ملز، مدینہ شوگر ملز اور رمضان شوگر ملز شامل ہیں۔ ان تمام شوگر ملوں کو ایک جیسے ہی نوٹس بھیجے گئے ہیں اور ان سے ایک جیسا ریکارڈ طلب کیاگیا.