’’ جوتا مارنے والی بات نہیں کرنی چاہیے تھی، لیکن اسد قیصر۔۔۔‘‘ شاہدخاقان عباسی قومی اسمبلی میں حرکت کے بعد پھر میدان میں آگئے، بڑی بات کہہ دی

’’ جوتا مارنے والی بات نہیں کرنی چاہیے تھی، لیکن اسد قیصر۔۔۔‘‘ شاہدخاقان عباسی قومی اسمبلی میں حرکت کے بعد پھر میدان میں آگئے، بڑی بات کہہ دی

اسلام آباد(نیوز ڈیسک )سابق وزیراعظم اور مسلم لیگ (ن) کے سینئر رہنما شاہد خاقان عباسی کا کہنا ہے کہ وہ اعتراف کرتے ہیں کہ انہیں اسپیکر کو جوتا مارنے کی بات نہیں کرنی چاہیے تھی۔ نجی ٹی وی پروگرام میں گفتگو کرتے ہوئے شاہد خاقان عباسی نے کہا کہ سپیکر صاحب بولنے کاموقع دیے بغیر قرارداد کو بلڈوز کرنا چاہتے تھے ۔

انہوں نے کہا کہ اسپیکر اسد قیصر پارلیمان کی روایات کو سمجھتے ہیں اور نہ ہی اپوزیشن کو کچھ سمجھتے ہیں۔یاد رہے کہ گزشتہ روز قومی اسمبلی کے خصوصی اجلاس میں (ن) لیگ کے رہنما شاہد خاقان عباسی اور سپیکر اسد قیصر کے درمیان تلخ جملوں کا تبادلہ ہوا تھا۔تلخ کلامی کے دوران شاہد خاقان عباسی نے سپیکر کو کہا کہ ’میں

آپ کوجوتاماروں گا ‘ تو اسپیکر نے کہا تھا کہ ’میں بھی وہ کام کروں گا۔ دوسری جانب وفاقی وزیر برائے اطلاعات ونشریات فواد چوہدری نے سابق وزیراعظم شاہد خاقان عباسی کو سپیکر قومی اسمبلی اسد قیصر سے ہونے والی تلخ کلامی پر تنقید کا نشانہ بنایا ہے۔ فواد چوہدری کا کہنا تھاکہ شاہد خاقان عباسی نے سپیکر کے بارے میں جو بات

کی اس کی مذمت کرتے ہیں، بدقسمتی ہے کہ ایسے لوگ بھی وزیراعظم رہے، یہ انتہا پسندی آپ لوگوں کے دور کی دی ہوئی ہے۔وفاقی وزیر کا کہنا تھاکہ شاہد خاقان ایک جوتا ماریں گے تو دوسری طرف سے 100 جوتے مارے جائیں گے