وزیر خزانہ نے بجٹ کے حوالے سے پاکستانیوں کو بڑی خوشخبری سنا دی

وزیر خزانہ نے بجٹ کے حوالے سے پاکستانیوں کو بڑی خوشخبری سنا دی - Today NewsTv

لاہور(ٹوڈے نیوز) وزیرخزانہ شوکت ترین نے بجٹ میں نئے ٹیکس نہ لگانے کا فیصلہ کرلیا ہے،انہوں نے کہاکہ بجلی ٹیرف بڑھانے سے کرپشن اور مہنگائی میں اضافہ ہورہا ہے، نیا ٹیکس لگانے کی بجائے ٹیکس نیٹ کو بڑھائیں گے، معاشی شرح نمو کو 5 فیصد پر لے جانے کے اقدامات کریں گے۔ سینئر صحافی صابر شاکر نے اپنی رپورٹ میں بتایا

کہ آئندہ سال کا مالی بجٹ آرہا ہے، وزیر خزانہ شوکت ترین نئے بجٹ کی تیاری شروع کرچکے ہیں، قائمہ کمیٹی کو بریفنگ بھی دی گئی، بجلی کے ٹیرف بڑھانا درست نہیں ہے، اس سے کرپشن اور مہنگائی میں اضافہ ہورہا ہے، بجلی ٹیرف بڑھانے کی آئی ایم ایف کی شرائط نہیں ماننی چاہیے تھیں۔بجٹ میں نئے ٹیکس بھی نہیں لگائے جائیں گے،ٹیکس نیٹ کو بڑھائیں گے، ٹیکس دینے والوں کی تعداد میں اضافہ کریں گے، جبکہ جو ٹیکس دے رہے ہیں ان کے

ٹیکس میں اضافہ نہیں کیا جائے گا، معاشی گروتھ کو پانچ فیصد پر لے جائیں گے، اگر معاشی شرح نمو کو پانچ فیصد پر نہ لے کرگئے تو نقصان ہوگا۔شوکت ترین نے حفیظ شیخ سے متعلق کہا کہ پچھلے اڑھائی سالوں میں پاکستان کی معیشت کو تباہ کیا گیا، طویل المدتی پلاننگ نہیں کی گئی، چین ، بنگلادیش کی معیشتوں کو سامنے رکھ کر پلاننگ کرنی چاہیے تھی۔مزید برآں گزشتہ روز وزیرخزانہ شوکت ترین سے وزیراقتصادی امور عمرایوب نے

ملاقات کی۔ جس میں وزارت خزانہ اور اقتصادی امور کے اعلیٰ حکام نے بھی شرکت کی۔ سیکریٹری اقتصادی امور نے مالیاتی امدادی اداروں کی فنڈنگ پربریفنگ دی۔ وزیرخزانہ شوکت ترین نے کہا کہ زرعی پیکیج، ویئرہاوَسنگ، کولڈ اسٹوریج اور آبپاشی کیلئے فنانسنگ پرتوجہ دی جائے۔بیرونی فنڈنگ سوشل پروٹیکشن اور فنی مہارتوں کے پروگراموں پرصرف کی جائے۔ پسماندہ طبقے کے تحفظ اور نوجوانوں میں ہنرکے فروغ کیلئے اقدامات ضروری ہیں۔

نوجوانوں کیلئے چھوٹے قرضوں کے فوری اجراء کیلئے اقدامات کیے جائیں۔ ترقی پذیرعلاقوں میں صاف پینے کے پانی، سالڈ ویسٹ مینجمنٹ اور بہتر خدمات کی فراہمی یقینی بنائی جائے۔ حکومت سماجی ترقی کے اہداف کو مدنظر رکھتے ہوئے معاشی اہداف کے حصول کیلئے کوشاں ہے۔اسی طرح وزیرخزانہ شوکت ترین سے خیبرپختونخوا کے وزیر

خزانہ تیمور سلیم جھگڑا نے بھی ملاقات کی۔ تیمور جھگڑا نے کہا کہ حکومت تنخواہوں اور پنشن کے اخراجات کو منظم بنانے کیلئے اقدامات کررہی ہے۔ شوکت ترین نے کہا کہ صوبائی حکومت مالیاتی ڈسپلن اپنا کر اخراجات پر کنٹرول اور کمی لاسکتی ہے۔ بجٹ میں گروتھ کے فروغ کو ترجیح دی جائے۔ وزیرخزانہ شوکت ترین سے پنجاب کے وزیرخزانہ ہاشم جواں بخت نے بھی ملاقات کی۔ جس میں مالیاتی امور اور پنجاب کے بجٹ بارے تبادلہ خیال کیا گیا۔