پاکستان میں یورپی پیرا گلائیڈنگ ٹیم نے نیا ریکارڈ بنا لیا

پاکستان میں یورپی پیرا گلائیڈنگ ٹیم نے نیا ریکارڈ بنا لیا

راولپنڈی (این این آئی)پاک فوج کے شعبہ تعلقاتِ عامہ (آئی ایس پی آر) نے کہا ہے کہ یورپی پیرا گلائیڈنگ ٹیم نے پاکستان میں نیا ریکارڈ قائم کر لیا ہے۔آئی ایس پی آر کے مطابق پیرا گلائیڈرز کی اس ٹیم میں آرمی اسکول آف فیزیکل ٹریننگ کاکول کی ٹیم بھی شامل تھی، پیرا گلائیڈرز نے 8407 میٹر بلندی پر پیرا گلائیڈنگ کا یہ ریکارڈ قائم

کیا۔آئی ایس پی آر کے مطابق دْنیا میں 8 ہزار میٹر سے بلند 14 میں سے 5 چوٹیاں پاکستان میں ہیں، 6 یورپی پیرا گلائیڈرز 25 مئی سے ہنزہ اور اسکردو میں موجود تھے۔آئی ایس پی آر کے مطابق ان پیرا گلائیڈرز کی قیادت عالمی شہرت یافتہ پیرا گلائیڈر انٹائن جراڈ کر رہے تھے، جون کے مہینے میں ان پیرا گلائیڈرز نے ہنزہ کی پہاڑیوں پر پریکٹس

کی۔پاک فوج کے شعبہ تعلقاتِ عامہ نے کہا کہ ان کا مشن پیرا گلائیڈنگ کر کے بلندی پر جانے کا عالمی ریکارڈ بنانا تھا، پہلے عالمی ریکارڈ 8157 میٹر کا ہے، جبکہ اب یہ نیا ریکارڈ 8407 میٹر کا بنایا جا چکا ہے۔آئی ایس پی آر نے بتایا کہ یہ ریکارڈ یورپی پیرا گلائیڈر انٹائن جراڈ نے اسکردو میں واقع بلتورو گلیشئر پر بنایا، پاکستان کے لیے یہ بڑے

اعزاز کی بات ہے کہ یہ ریکارڈ اس کی سر زمین پر بنا۔آئی ایس پی آر کے مطابق آرمی اسکول اور فیزیکل ٹریننگ کے مایہ ناز پیرا گلائیڈرز بھی پریکٹس میں شریک رہے، پاکستان آرمی پیرا گلائیڈنگ ٹیم کی قیادت کیپٹن احسن نے کی۔آئی ایس پی آر نے بتایا کہ ان کے ساتھ حوالدار قاسم اور حوالدار مقیت بھی اس مہم میں شامل تھے، ٹیم نے 5

سے 6 ہزار میٹر بلند 4 مختلف چوٹیوں سے کامیاب پیرا گلائیڈنگ کی۔آئی ایس پی آر نے کہا کہ غیر ملکی پیرا گلائیڈرز نے حکومت اور پاک فوج کا سہولتوں، سیکیورٹی اور دیگر معاونت پر شکریہ ادا کیا، اس عالمی ریکارڈ کی شہرت سے پاکستان کے شمالی علاقہ جات کی مقبولیت میں مزید اضافہ ہوا ہے۔