لاہور(این این آئی )پنجاب حکومت کی عدم دلچسپی، تعلیمی سال کا دورانیہ طے نہ ہونے کے باعث میٹرک اور انٹرمیڈیٹ کا نصاب فائنل نہ ہوسکا، طلباء امتحانات کی تیاری کیلئے منظور شدہ نصاب کے منتظر ہیں۔پنجاب حکومت تاحال جاری تعلیمی سیشن کا دورانیہ

فکس نہ کر سکی، تعلیمی سیشن کا دورانیہ طے نہ ہونے کے باعث سیکنڈ ایئر اور میٹرک کے لاکھوںطلبا پریشان ہیں۔ پنجاب بورڈز چیئرمینز کمیٹی کے مراسلہ کے باوجود حکومت تعلیمی سیشن پر فیصلہ نہ کر سکی۔بورڈز کمیٹی نے حکومت سے استدعا کی تھی کہ

جاری سال میں چھٹیوں کی تعداد اور آئندہ امتحان کے انعقاد سے آگاہ کیا جائے۔ حکومتی فیصلے کے بعد پنجاب کریکولم اینڈ ٹیکسٹ بک بورڈ طلباء کا امتحانی نصاب تیار کرے گا۔ میٹرک اور انٹرمیڈیٹ کے اساتذہ بھی حکومتی فیصلے کے منتظر ہیں۔دوسری جانب بی اے، بی ایس سی/ایسوسی ایٹ ڈگری سالانہ امتحانات، پنجاب یونیورسٹی شعبہ امتحانات نے انتظامات مکمل کرلئے، امتحانات میں

مجموعی طور پر ایک لاکھ 86ہزار طلباء کیلئے پنجاب بھر میں 325 سنٹرز قائم،کرونا کے باعث ہر سنٹر میں 35 کی بجائے 20 طلباء
کو بیٹھایا جائے گا۔تفصیلات کے مطابق پنجاب یونیورسٹی کے زیر اہتمام بی اے ،بی ایس سی /ایسوسی ایٹ ڈگری کے امتحانات دس ستمبر سے شروع ہورہے ہیں۔ پنجاب یونیورسٹی شعبہ امتحانات نے بی اے، بی ایس سی/ایسوسی ایٹ ڈگری کےامتحانات کیلئے

انتظامات مکمل کر لیئے ہیں۔پارٹ ون اور ٹو کے امتحانات میں مجموعی طور پر ایک لاکھ 86ہزار طلبہ شرکت کررہے ہیں، کنٹرولر امتحانات روف نواز کے مطابق امتحانات کے لئے پنجاب بھر میں 325 کے قریب سینٹر قائم کیے گئے ہیں،سینٹر میں کورونا ایس او پیز کا خاص خیال رکھا جائے گا۔ کورونا کے باعث ہر سنٹر میں 35 کی بجائے 20 طلباء کو بیٹھایا جائے گا۔

اپنا تبصرہ بھیجیں